پاک چین اکنامک کوریڈور اور گلگت بلتستان

Pak-China Industrial Corridor

پاک چین اکنامک کوریڈور کے حوالے سے جتنے بھی اعلیٰ سطح کے اجلاس ہوئے ہیں ان میں گلگت بلتستان کی طرف سے کوئی نمائندگی نہیں تهی تقریباً 400 کلومیٹر سے زیادہ کی سڑک گلگت بلتستان سے گزرتی ہے. ن لیگ کی حکومت نے مقامی گورنر کو ہٹایا اسی لئیے تها کہ نگراں حکومت موج مستیوں میں مصروف ہو گی. آگر مقامی گورنر ہو گا تو وہ اپنے حقوق کے لیے آواز اٹھائے گا..PPP کے وفاقی نمائندے گلگت بلتستان میں سیاسی جلسوں میں تو یہ کہتے ہیں کہ گلگت بلتستان کے لیے ہر پلیٹ فارم پر ان کے حقوق کے لیے آواز آٹهاتے ہیں. انہی لوگوں کے زبانوں سے اعلیٰ سطح کی اجلاسوں میں گلگت بلتستان کے لیے ایک لفظ نہیں نکلتا.
اگر ہمارے نمائندو ں میں تهوڈی بھی غیرت اور شرم باقی ہے تو قانونسازاسمبل کےانتخابات کا با ئکارٹ کریں اور اپنے حقوق کے لیے آواز اٹھائے.
. میں پاکستان کے ان فوجی آفیسروں کو بهی یاد دلانا چاہوں گا جو گلگت بلتستان کو پاکستان کا اٹوٹ انگ مانتے ہیں. وہ بهی شاید ببول گے کہ گلگت بلتستان کا بھی اکنامک کوریڈور میں کوئی عمل دخل بنتا ہے…

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s