پہلے تو بتہہ دینا پڑتا تها اب صرف چائے پلانی پڑتی ہے.

کراچی پاکستان کا سب سے بڑا شہر ہے. اسی طرح سب سے بڑے شہر ہونے کے باعث اس اس شہر کے مسائل بهی زیادہ ہیں. ملک بهر سے بےروزگار عوام اپنے روزگار کے سلسلے میں سب سے زیادہ کراچی کا رخ کرتے ہیں .
بہت سے لوگوں کی طرح سفی اللہ نے بهی اپنے روزگار کے سلسلے میں کراچی کا رخ کیا اور یہاں کراچی میں چائے کآ ہوٹل چلاتے ہیں ان کا تعلق صوبہ بلوچستان کے شہر کوئٹہ کے نواحی گاؤں سے ہے.اس نے ہوٹل چلانے کے لیے  اپنے چهوٹے  بهائیوں اور چچازاد بهائیوں کو اپنے ساتھ رکها  ہوا ہے .
ان کے پاس روزانہ جانے کی وجہ سے وہ ہماری پاس آ کر اپنے چهوٹے موٹے مسائل اور درد دل بهی سناتے رہتے ہیں اور مذاق وغیرہ بھی کرتے رہتے ہیں.

آج دوپہر کو معمول کے مطابق دوپہر کو چائے نوش کرنے کے لیے حسب عادت حبیب یونیورسٹی کے ساتھ رابعہ سٹی کے باہر چائے کے ہوٹل پر چائے کے انتظار میں بیٹھے تھے. اتنے میں ایک پولیس کی گاڑی وہاں آکر روکی اور اس میں سے ایک آفیسر سمیت پانچ اہلکار تھے. ان میں سے چار پولیس کے نوجوان نیچے اترے .ایک سپاہینے  سفی اللہ کو وہی سے روپ دار آواز میں حکم دیا کہ ان ک لیے پانچ سپیشل چائے بنائیں. سفی اللہ نے سر ہلا کر کہا میں بجهوا دیتا ہوں جناب.
میں ٹیبل پر بیٹھے چائے کا سیپ لیتے ہوئے سب کچھ غور سے دیکھ رہا تھا. پولیس کا ایک سپاہی گاڑی میں موجود پانی کے کولر میں برف ڈلوانے کے لیے ہوٹل کے ساتھ برف والا ہے اس کے پاس گیا. پسے دیے بغیر برف ڈلوا  کر واپس اپنے گاڑی کی طرف آیا . اتنےمیں ساتھ بیٹھے کامران نے کہا تم کیا پولیس والوں کو دیکھ رہے ہو یہ تو ان کا روز کا معمول ہے. آئنگے اور پیسے دیے بغیر  برف اور چائے پی کے چلے جائنگے ،وہی ہوا پولیس والوں نے چائے پی لی اور پیالوں کو  سڑک کے کنارے پر چهوڈ کر چلے گئے.
ان کے جانے کے بعد میں نے سفی اللہ کو بلایا اور پوچا یہ کیا ماجرا ہے پولیس والے بغیر پیسے دیے چلے گئے. سفی اللہ نے لمبی سانس لی اور کہا صاحب اب ان کو ہم کچھ کہہ نہیں سکتے . دن میں تین چار مرتبہ یہ لوگ ائنگے اور بنا پسے دیے چلے جائیں گے. ان کو چائے کے پیسوں کا تقاضا کرتے ہیں تو کہتے ہیں آپ نے یہاں پہ بیٹھ کر روزی کمانآ ہے یا واپس جانا ہے.
سفی اللہ نے ہنستے ہوے کہا پہلے تو بتہہ دینا پڑتا تها اب صرف چائے پلانی پڑتی ہے.

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s